Alhikmah International

یہ آپ کی لوگوں کی مدد کے منتظر ہیں
انہیں مایوس نہ کریں
Donate Now
ایک پیسہ بہت زیادہ ہوتا ہےاگرچہ آپ کے نزدیک اس کی کوئی قیمت نہیں
تو آئیے اس کو جمع کریں
Donate Now
ایک ساتھ مل کر ہم ان کی زندگیوں کو بہتر بنا سکتے ہیں
تو آئیے ان کی مدد کریں
Donate Now
ایک ساتھ مل کر ہم ان کی زندگیوں کو بہتر بنا سکتے ہیں
تو آئیے
Donate Now
Previous
Next

ماہانہ راشن

اس پروگرام کے تحت مستحق دِینی گھرانوں کی ماہانہ بنیادوں پر کفالت کی جا رہی ہے، جس میں روزمرہ کی اشیاء خورد نوش شامل ہوتی ہیں۔

طبی معاونت

اس پروگرام کے تحت نادار مریضوں کے لیے فری ڈسپنسری قائم کی گئی ہے اور مختلف ہاسپٹلز سے ان کے علاج میں تعاون کے لیے ڈاکٹرز کو سفارش بھی کی جاتی ہے۔ علاوہ ازیں روحانی و جادوئی امراض سے متاثرہ لوگوں کا قرآن و سنت کی روشنی میں دَم کے ذریعے علاج کیا جاتا ہے۔

مالی معاونت

اس پروگرام کے تحت خوشی و غمی کے مواقع پر مستحق افراد کی حسب استطاعت معاونت کی جاتی ہے، کمزور معاشی حالت والے افراد کو مشروط طور پر اور مخصوص رقم تک قرضِ حسنہ دینے کی سہولت بھی ہے۔

تعلیمی معاونت

اس پروگرام کے تحت  ایک  منفرد  تعلیمی نظام کا قیام عمل میں لایا گیا ہے، جس میں کالجز اور یونیورسٹیز کے طلبا کو بلامعاوضہ ہاسٹل اور میس کی سہولت فراہم کرتے ہوئے انہیں روزانہ اڑھائی گھنٹے کی کلاس میں فہم دین کورس کروایا جاتا ہے ، جو تعلیم وتربیت کی بنیاد  پرمشتمل ہے۔

ریسرچ لائیبریری

اس شعبے کے تحت سلیس، آسان  اور عام فہم انداز میں مستند اسلامی لٹریچر تیار کر کے عوام الناس کی راہنمائی اور تبلیغ کی غرض سے مفت تقسیم کیا جاتا ہے۔ ”سلسلۃ الکتاب والحکمۃ” کے نام سے مواقع اور مواسم کی مناسبت سے مختلف موضوعات اور اہم مسائل پر بروشرز کی ایک سیریز جاری ہے۔ نیز اس شعبے کا ایک امتیازی اقدام یہ ہے کہ اہلِ علم کی راہنمائی اور سرپرستی میں ہر خطبہ جمعہ کا ایک موضوع منتخب کیا جاتا ہے اور پھر خطباء کو اس موضوع پر علمی و تحقیقی مواد فراہم کیا جاتا ہے، تاکہ فروعی اختلافات سے بالاتر ہو کر عوام کو اجتماعی مسائل اور متفقہ دینی احکام سے آگاہ کیا جا سکے۔

تعلیمی بلڈنگ

اس پروگرام کے تحت ایک تعلیمی بلڈنگ کی تعمیر شروع کی گئی ہے، جو دس کنال اور پانچ منزل پر مشتمل ہوگی ، (ان شآء اللہ تعالیٰ ) جس کا تخمینہ لاگت تقریباًــــــــ جس میں مختلف  ڈپارٹمنٹس قائم کیے جائیں گے۔ جس میں تعلیم وتربیت کے ساتھ خصوصاًنسلِ نو کو اپنے فرائض منصبی سے شعوری آگاہی دینا ہے، تاکہ وہ اپنی صلاحتوں اور کوششوں سے معاشرے کو صحیح سمت کی طرف گامزن کرنے میں مثبت کردار ادا کر  سکے۔